0

امریکی جامعات میں اسرائیل مخالف مظاہرین پر پولیس کا حملہ؛ متعدد طلبا زخمی

واشنگٹن: امریکا کی ایموری یونیورسٹی میں اسرائیلی بربریت کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کرنے والے طلبا پر پولیس نے چڑھائی کردی جس سے علاقہ میدان جنگ کا منظر پیش کرنے لگا۔
عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی ریاست اٹلانٹا کی یونی ورسٹی میں پولیس نے پُرامن طلبا پر کالی مرچ اور ربڑ کی گولیاں استعمال کیں۔ آنسو گیس کی شیلنگ سے درجنوں طلبا کی حالت غیر ہوگئی تاہم یہ جبر و تشدد طلبا کو اسرائیل کے خلاف احتجاج سے نہ روک سکا۔
ایموری یونی ورسٹی کے طلبا کا اسرائیل مخالف مظاہرہ مکمل طور پر پُرامن تھا لیکن اس کے باوجود پولیس نے یونیورسٹی کے احاطے سے 550 سے زائد مظاہرین کو گرفتار کر لیا۔ جس پر پولیس اور طلبا کے درمیان جھڑپیں بھی ہوئیں۔
اسرائیل مخالف احتجاج کرنے والے طلبا نے کہا کہ ہم غزہ میں فلسطینیوں پر ہونے والے ظلم و جبر پر اُن کے ساتھ اظہار یکجہتی کر رہے ہیں لیکن کالج انتظامیہ کے حکم پر قانون نافذ کرنے والے اہلکاروں نے ہم پر تشدد کیا اور 500 سے زائد کو گرفتار کرکے تھانے میں بند کردیا۔
ایموری یونیورسٹی میں انگریزی اور مقامی علوم کے پروفیسر ایمل کیمے نے کہا کہ پولیس کے طلبا پر تشدد نے گوئٹے مالا میں ہونے والی خانہ جنگی کی یاد دلا دی۔ جب وہ چھوٹے تھے اور ایسے خوفناک مناظر اب بھی ذہن میں محفوظ ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں